جمعرات , ستمبر 20 2018
Home / خیبر پختونخوا / سانحہ یکہ توت میں شہید ہونے والے کرم و دیر اپر کے دو جوان بھی سپردخاک کر دیے گئے

سانحہ یکہ توت میں شہید ہونے والے کرم و دیر اپر کے دو جوان بھی سپردخاک کر دیے گئے

عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماء اور پی کے 78 سے پارٹی کے نامزد امیدوار ہارون بشیر بلور پر گزشتہ شب ہونے والے خودکش حملے میں دیر اپر اور ضلع کرم سے تعلق رکھنے والے دو کڑیل جوان بھی شہید ہوئے۔

کرم سے تعلق رکھنے والے جوان کے بھائی آصف حسین کے مطابق 25 سالہ عارف حسین کی تقریبا آٹھ ماہ قبل شادی ہوئی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ عارف حسین عوامی نیشنل پارٹی کا ایک سرگرم کارکن تھا اور گزشتہ شب پارٹی رہنما ہارون بلور کے انتخابی جلسے میں شرکت کی غرض سے گیا اور خودکش حملے کا شکار ہوا۔

عارف حسین کی میت آج آبائی گاؤں پاراچنار منتقل کی گئی جہاں سینکڑوں لوگوں کی موجودگی میں انہیں پیوندخاک کیا گیا۔

عارف کی نماز جنازہ میں اے این پی قبائلی ضلع کرم کے عمائدین اور عام افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔

اس موقع پر حاضرین نے مطالبہ کیا کہ حکومت واقعے کے ذمہ داروں کا فوری تعین کرکے انہیں منطقی انجام تک پہنچائے۔

دوسری جانب اپر دیر کے سیراٹی نامی گاؤں سے تعلق رکھنے والا تین بہنوں کا اکلوتا بھائی محمد شعیب بھی حملے میں شہید ہوا جسے آہوں اور سسکیوں کے درمیان سپردخاک کیا گیا۔

ٹی این این کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے شہید کے والد قاری شفیع اللہ کا کہنا تھا کہ گزشتہ شب کھانا بیچ میں چھوڑ کر ان کا بیٹا انہیں جلسہ گاہ لے گیا اور جب وہ سٹیج پر اکابرین کے ساتھ بیٹھ گئے اور ان کا بیٹا نوجوانوں کے ساتھ پنڈال میں مشغول ہوا تو اتنے میں ایک دھماکہ ہوا جس کے بعد انہیں کوئی ہوش نہیں رہا۔

دونوں آنکھوں کی بینائی سے معذور قاری شفیع اللہ کا وہ ارمان بھی خاک میں مل گیا جس کیلئے وہ، ان کی اہلیہ اور تین بیٹیاں ایک عرصہ سے منتطر تھیں۔

واضح رہے کہ محمد شعیب تھرڈ ایئر کا سٹوڈنٹ تھا جبکہ ان کا خاندان ایک عرصہ سے پشاور میں رہائش پذیر ہے۔

Check Also

خیبر، علی مسجد کی بچیاں پانچویں جماعت سے آگے بھی پڑھنا چاہتی ہیں مگر۔۔

ظاہر شاہ سے قبائلی ضلع خیبر کے علاقے علی مسجد کی بچیاں پرائمری پاس کرنے …

Pin It on Pinterest

Shares
Share This