جمعرات , ستمبر 20 2018
Home / خیبر پختونخوا / فاٹا انضمام کا معاملہ اگلی حکومت پر چھوڑ دیا گیا

فاٹا انضمام کا معاملہ اگلی حکومت پر چھوڑ دیا گیا

وفاقی حکومت نے فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کرنے کا معاملہ آئندہ بننے والی حکومت پر چھوڑ دیا گیا۔

ڈان ٹی وی ویب سائٹ کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے یہ فیصلہ آئندہ انتخابات کے تناظر میں اپنی 2 اتحادی جماعتوں جمعیت علمائے اسلام (ف) اور پشتونخوا ملی عوامی پارٹی (پی کے میپ) کی مخالفت سے بچنے کے لیے کیا۔

واضح رہے کہ جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن اور پی کے میپ کے صدر محمود خان اچکزئی نے فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے فیصلے کی شدید مخالفت کرتے ہوئے اسے قبائلی عوام کی امنگوں کے خلاف قرار دیا تھا

جبکہ اپوزیشن کی 2 بڑی جماعتیں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) اس انضمام کے حق میں تھیں۔

اس حوالے سے قومی اسمبلی کے متعدد اجلاس ہوئے جن میں وزیر مملکت برائے سرحدی امور (سیفرون) لیفٹننٹ جنرل (ر) عبدالقادر بلوچ نے ایوان کو بتایا کہ فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کرنے کے حوالے سے معاملات آئندہ منتخب ہونے والی حکومت کے لیے چھوڑ دیئے گئے ہیں تاہم اس سلسلے میں کوئی قانون سازی نہیں کی جارہی اورفی الوقت فاٹا کی موجودہ حیثیت ہی برقرار رہے گی

اس ضمن میں ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر اس انضمام کو عملی جامہ پہنا بھی دیا جاتا ہے تو موجودہ حکومت کی مدت (31 مئی تک) کے پیش نظر یہ فیصلہ خیبرپختونخوا کے لیے پیچیدگیوں کا باعث بن جائے گا کیوں کہ پھر محض 15 دن کے اندر خیبرپختونخوا کی حکومت کو صوبائی اسمبلی میں فاٹا کی سیٹوں کے لیے حلقہ بندیاں کرنی پڑتیں جو اتنے مختصر عرصے میں ناممکن تھا

Check Also

ایشیا کپ، افغانستان اور بنگلہ دیش کے درمیان میچ ابوظہبی کے شیخ زید سٹیڈیم میں جاری

متحدہ عرب امارات میں جاری ایشیاء کپ کا چھٹا میچ افغانستان اور بنگلہ دیش کے …

Pin It on Pinterest

Shares
Share This