پیر , جولائی 16 2018
Home / خیبر پختونخوا / خیبر پختونخواہ میں ڈرگ ڈیلرز ہڑتال کیوں کرہے ہیں؟

خیبر پختونخواہ میں ڈرگ ڈیلرز ہڑتال کیوں کرہے ہیں؟

پشاور سمیت خیبر پختونخواہ کے کئی اضلاع میں آج دوسرے روز بھی ادویات فروشوں کی ہڑتال جاری ہے جسکی وجہ سے پشاور کے بڑے ہسپتالوں کے سامنے فارمیسی شاپس اور شہر میں دیگر مقامات پر دوائی کی دکانیں بند پڑی ہیں۔جسکی وجہ سے مریضوں کو ادویات لینے میں مشکلات پیش آرہی ہیں۔

 مریضوں کا کہنا ہے کہ جان بچانی والی ادویات حاصل کرنے میں بڑی دشواری پیش آرہی ہے ۔

 کیمسٹ اینڈ ڈرکسٹ ایسسوسی ایشن کے عہدیدار کا موٗقف ہے کہ کہ صوبائی حکومت نے خیبر پختونخواہ ڈرگ ایکٹ 2017 کے زریعے میڈیکل سٹورز مالکان کی فارم ب اور فارم سی کے لائنسنس ختم کیے ہیں، جو ان کے ساتھ زیادتی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ نئے ڈرگ رولز کے مطابق ہر میڈیکل سٹور میں ایک فارماسسٹ کی موجودگی لازمی ہے جو ان کے لئے ناممکن ہے اور حکومت کے اس اقدام سے ہزاروں کی تعداد میں ادویات سے وابستہ داکانداروں کی بے روزگار ہونے کا خدشہ ہے۔

ایسسوسی ایشن کے ترجمان شمس الرحمان کا کہنا ہے کہ آج ایسوسی ایشن کا اجلاس ہو رہا ہے اور آئندہ لائحہ عمل کے بارے میں بات چیت جاری ہے، تاہم انہوں نے بتایا کہ آج بھی انکا ہڑتال جاری ہے اور انہوں نے میڈیکل سٹورز احتجاجاٗ بند کئے ہوئے ہیں۔

دوسری جانب محکمہ صحت خیبر پختونخواہ کا موٗقف ہے کہ ڈرگ رولز میں ترامیم سے عطایئوں کا سد باب ہوسکے گا اور غیر مستند اور نااہل افراد ادویات  فروخت نہیں کر سکیں گے۔

محکمہ صحت کے ترجمان کا کہنا ہے کہ شعبہ طب میں غیر مستند افراد اور عطایئوں کے حوالے سے سپریم کورٹ نے واضح ہدایات دی ہیں اور ان ہدایات کے تناظر میں ڈرگ رولز 1982 میں ترامیم عوام کے بہتر مفاد میں کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ  کیمسٹ اینڈ ڈرکسٹ ایسسوسی ایشن کی جانب سے گزشتہ دن صوبے کے مختلف حصوں میں خیبر پختونخواہ ڈرگ ایکٹ 2017 کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے گئے تھے ۔پشاور میں صوبائی اسمبلی اور پریس کلب کے سامنے مظاہرین نے سڑکیں بلاک کرکے احتجاج کیا تھا۔

تبصرہ کریں

Check Also

فرانس فٹبال کی دنیا کا سلطان بن گیا، فائنل میں کروشیا کو شکست

فٹ بال ورلڈکپ 2018 کے فائنل میں فرانس نے کروشیا کو 2-4 سے شکست دے …

Pin It on Pinterest

Shares
Share This