بدھ , اپریل 25 2018
Home / دنیا بھر سے / ’امریکہ انتہائی اقدام اُٹھانے سے پہلے پاکستان سے بات کرے گا‘

’امریکہ انتہائی اقدام اُٹھانے سے پہلے پاکستان سے بات کرے گا‘

امریکی ڈیفنس سیکرٹری جیمز میٹس نے کہا ہے کہ پاکستان کی افغانستان میں شدت پسند گروہوں کی مبینہ معاونت کے بارے میں کوئی بھی اقدام اُٹھانے سے پہلے امریکہ پاکستان سے ‘ایک بار پھر’ اس مسئلے پر بات کرے گا۔

ہاؤس کی آرمڈ سروس کمیٹی کے اجلاس میں وزیر دفاع نے کہا کہ ‘ضروری ہے کہ ہم ایک بار پھر پاکستان کے ساتھ مل کر حکمت عملی پر کام کرنے کی کوشش کریں اور اگر اس کے باوجود بھی ہم کامیاب نہیں ہوئے تو صدر ٹرمپ ہر ضروری اقدام اُٹھانے کے لیے تیار ہیں۔’

انھوں نے بتایا کہ پاکستانی حکام سے بات چیت کے لیے وہ جلد پاکستان جا رہے ہیں لیکن اس کے بارے میں وزیر دفاع نے مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں ہیں۔

دوسری جانب پاکستان کے وزیر خارجہ خواجہ آصف واشنگٹن کے دورے پر ہیں، جہاں وہ آج امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن سے ملاقات کریں گے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق ٹرمپ انتظامیہ افغانستان میں شدت پسند گروہوں کی مبینہ پاکستانی معاونت کے ردعمل کے طور پر پاکستان میں ڈرون حملوں کا دائرہ کار وسیع کر سکتا ہے اور پاکستان کے غیر نیٹو اتحادی کا درجہ کم کر سکتا ہے۔

یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے جنوبی ایشیا کے بارے میں اپنے پہلے خطاب میں پاکستان کو تنبیہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ ‘اب پاکستان میں دہشت گردوں کی قائم پناہ گاہوں کے معاملے پر مزید خاموش نہیں رہ سکتا۔’

صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ امریکہ چاہتا ہے کہ اس خطے میں دہشت گردوں اور ان کی پناہ گاہوں کا صفایا ہو۔ امریکہ پاکستان کا اتحادی رہا ہے لیکن اگر وہ مسلسل دہشت گردوں کا ساتھ دے گا تو اس کے لیے مشکلات پیدا ہو سکتی ہیں۔

تبصرہ کریں

Check Also

پی ٹی ایم کے مطالبات جائز قرار، مذاکرات کیلئے اپیکس کمیٹی تشکیل

پاک فوج کا کہنا ہے کہ پشتون تحفظ موقومنٹ کے مطالبات جائز ہیں جبکہ تحریک …

Pin It on Pinterest

Shares
Share This