ہفتہ , ستمبر 22 2018
Home / تازہ ترین / میانمار میں مسلمانوں پر تشدد بنگلہ دیش کا مسئلہ نہیں ہے، حسینہ واجد

میانمار میں مسلمانوں پر تشدد بنگلہ دیش کا مسئلہ نہیں ہے، حسینہ واجد

روہنگیا میں مسلمانوں پر تشدد اور انسانیت کی تذلیل پر جہاں کئی ممالک یکجا ہونے کو تیارہیں وہی پر بنگلہ دیشی وزیراعظم حسینہ واجد کا کہنا ہے کہ میانمار میں مسلمان پناہ گزینوں پر تشدد بنگلہ دیش حکومت کا مسئلہ نہیں ہے تاہم بنگلہ دیشی حکومت مزید پناہ گزینوں کو برداشت نہیں کرسکتا کیونکہ بنگلہ دیش پہلے ہی ایک زیادہ آبادی والا ملک ہے۔ عرب ٹی وی کو دیئے گئے انٹرویو میں حسینہ واجد کا کہنا تھا کہ میانمار اور روہنگیا میں مسلمانوں کا قتل عام اور ان پرتشدد ہورہاہے تو بنگلہ دیش وہاں سے ہجرت کرنے والے مسلمانوں کو پناہ نہیں دے سکتا تاہم میانمار کے لوگوں پر تشدد اور وہاں سے ہجرت کرنے والے لوگوں کے معاملے پر صرف بنگلہ دیش پر پریشر ڈالنا یا پھر ہناہ گزینوں کو یہاں پر پناہ دینا بنگلہ دیش کی ذمہ داری نہیں ہے عالمی برداری کو چائیے کہ وہ میانمار کی حکومت سے اس مسئلے پر بات کریں نہ کہ بنگلہ دیش کی حکومت پر پریشر ڈالیں۔ایک سوال کے جواب میں حسینہ واجد نے مزید کہا کہ بنگلہ دیش میں داخل ہونے والے پناہ گزینوں کو یہاں سے نکالنے کی خبروں میں کوئی صداق نہیں ہاں البتہ مزید پناہ گزینوں کو بنگلہ دیش برداشت نہیں کرسکتا۔ حسینہ واجد نے مزید کیا کہا آپ بھی ملاحظہ کیجیئے۔

Check Also

اصلاحاتی عمل میں واپسی نہیں بلکہ مزید پیشرفت کی جائے گی۔ علامہ نورالحق قادری

مذہبی امور کے وفاقی وزیر اور فاٹا اصلاحاتی ٹاسک فورس کے رکن علامہ نور الحق …

Pin It on Pinterest

Shares
Share This